حکومت نے عمران خان کی مذاکرات کی پیشکش مسترد کردی

1 month ago 23

حکومت نے عمران خان کی مذاکرات کی پیشکش مسترد کردی۔ وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب کہتی ہیں کہ جب ہم کہتے تھے مذاکرات ہونے چاہئیں تو کہتے تھے این آر او نہیں دوں گا، ہم آپ کے ساتھ مذاکرات نہیں کرسکتے۔

عمران خان کی پریس کانفرنس پر جوابی پریس کانفرنس میں وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے کہا کہ روزانہ اپنی ناکامی کا ماتم کرنے سے کوئی فرق نہیں پڑتا، پاکستان کے عوام آپ سے سوال پوچھتے ہیں کہ آپ جو باتیں کررہے ہیں وہ 4 سال میں کیوں نہیں کیا، آخر کیوں 4 سال بعد دوبارہ اقتدار چاہتے ہیں اور کہتے ہیں کہ دوتہائی اکثریت نہ ہوئی تو دوبارہ الیکشن کراؤں گا۔

ان کا کہنا ہے کہ پاکستان کے عوام آپ کو مسترد کرچکے ہیں کیونکہ نہ آپ ایک کروڑ نوکریاں اور پچاس لاکھ گھر دے سکے اور نہ ہی ریاست مدینہ بناسکے تو اقتدار کیوں چاہئے، ماڈل ٹاؤن کا فیصلہ ہوچکا، اگر اس میں ابہام تھا تو آپ 4 سال حکومت میں تھے کیوں اس کو ایسے ہی چھوڑ دیا اور تحقیقات نہیں کروائیں۔

مریم اورنگزیب نے مزید کہا کہ اگر پُرامن احتجاج کی کال دی تھی تو اسلحہ، ڈنڈے اور گولیاں کیوں جمع کیں، پولیس پر تشدد کیوں کیا، آپ کی تیاری پولیس والوں کے سر پھاڑنے اور سرکاری املاک کو آگ لگانے کی تھی، آپ کی تیاری اب 100 سال تک بھی نہیں ہوسکتی، آپ 100 سال تیاری کریں اب پاکستان کے عوام آپ کے ساتھ نہیں۔

ن لیگی رہنماء کا کہنا ہے کہ آپ کی تیاری اتنی تھی کہ جلسی تک نہیں کرسکے، سرکاری املاک کو نقصان پہنچانا کوئی جمہوری حق نہیں، خونیں مارچ کا اعلان کرنا کوئی جمہوری حق نہیں۔

مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ اب سپریم کورٹ کو دھمکیاں دیتے ہیں، کہتے ہیں پٹیشن لیکر جارہا ہوں، آپ کو سرکاری املاک کو نقصان پہنچانے کی اجازت نہیں دی جاسکتی، اگر ریاست پر حملہ کرنے کی کوشش کرینگے تو اجازت نہیں ملے گی۔

انہوں نے کہا کہ جب ہم کہتے تھے مذاکرات ہونے چاہئیں تو کہتے تھے این آر او نہیں دوں گا، عمران خان ہم آپ کے ساتھ مذاکرات نہیں کرسکتے، آپ کو این آر او نہیں ملے گا۔

Read Entire Article