قانونی ماہرین نے عماد یوسف پر درج ایف آئی آر پر سوالات اٹھادئیے

1 month ago 86

کراچی: ماہر قانون سلمان ابوزر نے اے آر وائی نیوز کے ہیڈ عماد یوسف پر درج ایف آئی آر پر سوالات اٹھادئیے۔

تفصیلات کے مطابق اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے ماہر قانون نے کہا کہ عماد یوسف پر درج ایف آئی آر لکھنےوالا مضحکہ خیزبات لکھتا ہے۔

ایف آئی آرلکھنےوالا لکھتا ہےکہ میرے خیال میں انتظامیہ بھی شامل تھی، لگتا ہے کہ ایف آئی آر درج کرنے والےکےپاس سپرپاورتھی کہ اسےسب علم ہوگیا؟، ایف آئی آرمیں بدنیتی کاعنصرموجود ہے۔

ابوذرسلمان نیازی کا کہنا تھا کہ عماد یوسف کےگھرپردھاوا بول کرقانون کامذاق اڑایاگیا، بغیروارنٹ کےکسی گھرمیں داخل ہوناخلاف قانون ہے۔

ماہر قانون نے واضح کیا کہ اگرکسی سےپوچھ گچھ کرنی ہےتواسےطلب بھی کیاجاسکتاہے، کیس میں یہ دیکھناہوتا ہےکہ نامزد شخص کو گرفتارکرناضروری بھی ہےیا نہیں؟

اے آر وائی نیوز سے گفتگو میں ابوذرسلمان نیازی کا کہنا تھا کہ جسمانی ریمانڈ میں ہی زبردستی بیان لیا جاتا ہے، یہ کیس میں مجھےجسمانی نہیں جوڈیشل ریمانڈ کا ہی نظرآتا ہے تاہم حتمی فیصلہ تو عدالت نےہی کرنا ہے۔

Comments

Read Entire Article