کیا بھارت امریکا کو لڑاکا طیارے فروخت کرے گا ؟

5 days ago 14

بھارت ( India ) کی جانب سے امریکا ( USA ) اور ملائیشیا سمیت دیگر 6 ممالک کو جدید لڑاکا طیارے فروخت کرنے کی پیشکش کی گئی ہے۔

بھارتی ذرائع ابلاغ ٹائمز ناؤ کے مطابق بھارت کی وزارت دفاع نے کہا ہے کہ ملائیشیا کو ( Tejas ) 18 لائٹ لڑاکا طیارے (ایل سی اے) تیجس فروخت کرنے کی پیشکش کی ہے، جب کہ ارجنٹائن، آسٹریلیا، مصر، امریکا، انڈونیشیا اور فلپائن بھی سنگل انجن والے ان لڑاکا طیاروں کر خریدنے میں دلچپسی رکھتے ہیں۔

بھارتی حکومت نے گزشتہ سال سرکاری ادارے ہندوستان ایروناٹکس لمیٹڈ کو 6 ارب ڈالر کا کنٹریکٹ دیا تھا تاکہ مقامی طور پر تیار کردہ 83 تیجس جیٹ طیاروں کی ڈیلیوری 2023 سے شروع کی جاسکے، پہلی بار اس کی منظوری چار دہائیوں قبل 1983 میں دی گئی تھی۔

بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت غیر ملکی دفاعی ساز و سامان پر انحصار کم کرنا چاہتی ہے، ان کی حکومت جیٹ طیاروں کی برآمد کے لیے سفارتی سطح پر بھی کوششیں کر رہی ہے۔

تیجس طیاروں کو ڈیزائن و دیگر چیلنجز کا سامنا رہا ہے، ایک بار بھارتی بحریہ نے اسے بہت وزنی بتاکر مسترد کردیا تھا۔

وزارت دفاع نے پارلیمنٹ کو بتایا کہ ہندوستان ایروناٹکس نے گزشتہ برس اکتوبر میں رائل ملائیشین ایئر فورس کی جانب سے 18 جیٹ طیاروں کی درخواست پر تیجس کے 2 سیٹوں والے ویرینٹ کو فروخت کرنے کی پیشکش کی۔

بھارت کے جونیئر وزیر دفاع اجے بھٹ نے تحریری جواب میں اراکین پارلیمنٹ کو بتایا کہ جن دیگر ممالک نے ایل سی اے طیارے خریدنے میں دلچسپی ظاہر کی ہے ان میں ارجنٹائن، آسٹریلیا، مصر، امریکا، انڈونیشیا اور فلپائن شامل ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ بھارت اسٹیلتھ لڑاکا طیاروں کی تیاری پر بھی کام کر رہا ہے لیکن انہوں نے قومی سلامتی کے خدشات کی وجہ سے ٹائم لائن دینے سے انکار کر دیا۔

برطانیہ نے اپریل میں کہا تھا کہ وہ بھارت کو اپنے جنگی جہاز تیار کرنے میں سپورٹ کرے گا۔ بھارت کے پاس روسی، برطانوی اور فرانسیسی ساختہ جنگی طیارے ہیں۔

روزنامہ ‘ٹائمز آف انڈیا’ کے مطابق متعدد مہلک حادثات کی وجہ سے بھارت، سویت یونین دور کے روسی لڑاکا طیارے ’مگ 21 ’ کو 2025 تک گراؤنڈ کرنا چاہتا ہے۔

Read Entire Article